یوپی میں نئے مدارس کو گرانٹ نہیں دی جائے گی، 
سی ایم یوگی نے اکھلیش حکومت کا فیصلہ پلٹا
لکھنؤ
یوپی میں نئے مدارس کو اب سرکاری گرانٹ نہیں ملے گی۔ سی ایم یوگی نے سماج وادی پارٹی کی حکومت کے دوران لیے گئے فیصلے کو پلٹتے ہوئے یہ فیصلہ لیا ہے۔ یہ فیصلہ منگل کو کابینہ کے اجلاس میں کیا گیا۔
اتر پردیش حکومت عالیہ سطح کے مستقل طور پر تسلیم شدہ مدارس کو سال 2003 تک گرانٹ نہیں دے گی۔ یہ فیصلہ منگل کو کابینہ کی میٹنگ میں محکمہ اقلیتی بہبود کی طرف سے لائی گئی تجویز پر کیا گیا۔
دراصل، ریاستی حکومت نے یہ فیصلہ ریاست کی پچھلی سماج وادی حکومت کے دور میں لیے گئے فیصلے کو پلٹتے ہوئے لیا ہے۔ ایس پی حکومت کے دور میں 2003 تک تسلیم شدہ 146 مدارس کو گرانٹ لسٹ میں لینے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ اس کے بعد 100 مدارس کو بھی گرانٹ لسٹ میں لیا گیا۔
باقی 46 مدارس کو گرانٹ لسٹ میں لیے جانے سے قبل ہی حکومت میں تبدیلی ہو گئی  جس کے بعد ان 46 مدارس کو گرانٹ پر نہیں لیا جا سکا۔ ان میں سے کچھ مدارس نے دربار میں پناہ لی۔ اس وقت ریاست میں کل 560 مدارس کو حکومت کی طرف سے گرانٹ دی جارہی ہے۔ گرانٹ کے تحت ان مدارس کے اساتذہ اور عملے کو تنخواہ دی جاتی ہے۔