احمد آباد: گجرات کے وڈودرا کی ایمس یونیورسٹی میں نماز پڑھنے کا ویڈیو پھر سے تنازعہ کھڑا کردیا ہے، سائنس فیکلٹی کے باٹنی ڈپارٹمنٹ میں ایک طالبہ کے ذریعے نماز پڑھنے کا ویڈیو وائرل ہوا ہے، اس سے اب حالات کشیدہ ہوتے جارہے ہیں۔ کلاس میں نماز پڑھنے کا یہ ویڈیو جمعہ کا بتایا جارہا ہے، کالج کے کچھ طلبہ سے ملی جانکاری کے مطابق جمعہ کو دوپہر کالج کیمپس میں پتنگ بازی کا پروگرام رکھا گیا تھا، اس دوران دیگر طلبہ پتنگ اڑا رہے تھے، وہیں ایک مسلم طالبہ کلاس میں نماز پڑھ رہی تھی۔ ایمس یونیورسٹی کے ترجمان لکولش ترویدی نے بتایاکہ یونیورسٹی ایسے طلبہ کی مسلسل کائونسلنگ کرکے انہیں سمجھا رہا ہے کہ یہ تعلیم کا مرکز ہے اور وہ اسے مذہبی اکھاڑہ نہ بنائیں، یہاں وہ اپنی پڑھائی کریں اور آگے بڑھیں۔ بتادیں کہ کالج کیمپس میں نماز پڑھنے کا ایک ایسا ہی معاملہ سال گزشتہ ۲۶ دسمبر کو بھی سامنے آیا تھا، اس دوران کامرس ڈپارٹمنٹ میں امتحان دینے آئے تھے لڑکے کیمپس میں نماز ادا کرتے ہوئے نظر آئے تھے، اس پر کالج میں ہنگامہ ہوا تھا، ویڈیو وائرل ہونے کے بعد وشو ہندو پریشد کے کارکنان نے کیمپس میں رام دھن اور ہنومان چالیسا کا پاٹھ بھی کیا تھا۔