بھوپال:  مدھیہ پردیش کے ودیشا ضلع ہیڈکوارٹر میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ایک لیڈراہلیہ اور دو بچوں کے ساتھ زہریلی چیز کھا کر خودکشی کر لی ہے۔وہ اپنے دونوں بیٹوں کی لاعلاج بیماری سے پریشان تھا۔ خودکشی کرنے سے پہلے اس نے فیس بک پر دل کو چھو لینے والی پوسٹ بھی ڈالی تھی۔پولیس ذرائع کے مطابق کل شام بی جے پی لیڈر سنجیو مشرا اپنے خاندان کے ساتھ گھر پر تھے۔ خودکشی سے کچھ دیر پہلے انہوں نے سوشل میڈیا پر ایک پوسٹ بھی ڈالی تھی۔ اس کے بعد انہوں نے گھر کا دروازہ بند کر کے گھر والوں کے ساتھ زہریلی چیز کھا لی۔دونوں بچوں اور میاں بیوی کو تشویشناک حالت میں ضلع اسپتال لایا گیا۔ جہاں پہلے دونوں بیٹے اور بعد میں سنجیو مشرا، پھر ان کی بیوی نے دم توڑ دیا۔ سنجیو مشرا بی جے پی کے درگا نگر کے منڈل نائب صدر اور سابق کونسلر تھے۔کلکٹر اوماشنکر بھارگو نے کہا کہ سنجیو مشرا کے بچوں کو لاعلاج بیماری تھی۔ جیسا کہ انہوں نے اپنے سوسائڈ نوٹ میں لکھا ہے، ‘میں بچوں کونہیں بچاپارہا ہوں، میں مزید زندہ نہیں رہنا چاہتا’۔ انہوں نے دروازہ بند کیا اور سلفاس کھایا۔ فیس بک پر ڈالی گئی پوسٹ کو دیکھ کر لوگوں نے پولیس کو اطلاع دی، جس کے بعد پولیس کی ٹیم موقع پر پہنچی اور دروازہ توڑ کر تمام کو اسپتال لے جایا گیا، جہاں ان کی موت ہوگئی۔