گری راج نےکہا ’مسلمانوں سے نہیں ان کی بنیاد سوچ سے ملک کو خطرہ‘
نئی دہلی :(ایجنسی)
رام نومی کے دن ملک کے کئی حصوں سے تشدد کی اطلاعات موصول ہوئیں۔ بی جے پی لیڈروں پر فساد بھڑکانے اور سماج میں زہر گھولنے کا الزام لگایا جا رہا ہے۔ سوشل میڈیا پر دونوں برادریوں کی جانب سے الزامات اور جوابی الزامات لگائے جا رہے ہیں، دونوں برادریوں کے لوگوں کی کئی ویڈیوز وائرل ہو رہی ہیں۔ اس دوران بی جے پی لیڈر اور مرکزی وزیر گری راج سنگھ کا بیان سامنے آیا ہے۔

گری راج سنگھ نے کہا ہے کہ میں بار بار کہتا ہوں کہ ملک کے اندر جو واقعات ہو رہے ہیں۔ رام نومی کے موقع پر پتھراؤ کوئی اتفاق نہیں بلکہ ایک تجربہ ہے۔ مسلمانوں کی بڑھتی ہوئی آبادی ملک کے لیے خطرہ نہیں بلکہ بنیاد پرست سوچ سے خطرہ ہے۔ ٹکڑے ٹکڑے گینگ اور جے این یو میں لوگوں کی طرف سے لگائے جانے والے نعرے ملک کے لیے خطرہ ہیں۔ شرجیل امام سے ملک کو خطرہ ہے۔ گورکھپور مندر پر حملہ کرنے والوں سے ملک کو خطرہ ہے۔
گری راج سنگھ کے اس بیان پر لوگوں نے اپنا ردعمل بھی دیا ہے۔ کوشتبھ شکلا نامی صارف نے لکھا کہ ‘سب سے بڑا خطرہ سرکاری محکمے میں لاکھوں اسامیاں خالی پڑنے اور ملک میں نئی ​​کمپنیاں نہ آنے سے ہے۔ موجودہ حالات کو دیکھ کر ایسا نہیں لگتا کہ کوئی کمپنی ہندوستان آنے میں دلچسپی رکھتی ہے۔
ویرین نامی صارف نے لکھا کہ ’پہلے یہ طے کریں کہ ملک کو کس سے خطرہ ہے۔ ہمیں لگتا ہے کہ ملک کو خطرہ بی جے پی آر ایس ایس سے ہے۔‘ خالصہ نامی صارف نے لکھا کہ ’اس کا مطلب ہے کہ آپ کو خطرہ ہے، آپ ایک بنیاد پرست بھی ہیں۔‘ دنیش نامی صارف نے لکھا کہ ‘جتنا چاہو اندھیرا کرو، لیکن ایک یقینی طور پر دن کی روشنی ہوگی۔