اے ایم یو کے پروفیسر پر مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کا الزام، وجہ بتاؤنوٹس۔
علی گڑھ : (ایجنسی) علی گڑھ مسلم یونیورٹی کی جانب سے پروفیسر کے خلاف وجہ بتاؤ نوٹس جاری کیا گیا ہے ۔ ان پر کلاس کے دوران مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کا الزام لگا ہے ۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے اس الزام کو کافی سنجیدگی سے لیا ہے ۔ ملزم پروفیسر کے خلاف جانچ بیٹھا دی گئی ہے ۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے جانچ کمیٹی کی تشکیل کرکے متعلہ پروفیسر سے 24 گھنٹے کے اندر جواب طلب کیا ہے ۔ دوسری طرف معاملہ بڑھنے کے بعد ڈاکٹر جتیندر کمار نے شرط کے بغیر معافی مانگ لی ہے ۔

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی انتظامیہ کے سامنے پروفیسر کے خلاف شکایت درج کرائی گئی تھی ۔ اس کی بنیاد پر کارروائی ہوئی ہے ۔ جانکاری کے مطابق فیکلٹی آف میڈیسن کے پروفیسر ڈاکٹر جتیندر کمار ریپ کے افسانوی تناظر پر ایک سلائیڈ شو کے ذریعہ طلبہ کو پڑھا رہے تھے ۔ اس دوران انہوں نے جو تبصرہ کیا ، وہ طلبہ و مناسب نہیں لگا ۔ اس کے بعد طلبہ نے اے ایم یو انتظامیہ کے سامنے اس کی شکایت کی ، جس کے بعد کارروائی ہوئی ہے ۔
ڈاکٹر جتیندر کمار لیکچر کی علی گڑھ مسلم یونیورسٹی انتظامیہ اور فیکلٹی آف میڈیسن نے سخت مذمت کی ہے ۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے کہا کہ ڈاکٹر کمار نے طلبہ ، ملازمین اور عام لوگوں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچایا ہے ۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے ان سے 24 گھنٹے کے اندر لگائے گئے الزما پر جواب مانگا ہے ۔
ڈاکٹر جتیندر کمار پر لگے الزامات کی جانچ کیلئے یونیورسٹی انتظامیہ نے دو رکنی جانچ کمیٹی تشکیل کردی ہے ۔ فیکلٹی آف میڈیسن کے ڈین پروفیسر راکیش بھارگو کی سفارش پر اس کمیٹی کو تشکیل کیا گیا ہے ۔ یہ کمیٹی پورے معاملہ کی جانچ کرے گی اور اس معاملہ کو لے کر آگے اٹھائے جانے والے اقدامات کی سفارش کرے گی ۔