عید الاضحی کے موقع پرافواہوں پر دھیان نہ دینے کی اپیل، جمعیة علماءشاخ بڈھانہ کی مجلس عاملہ کے اجلاس میں نوپور شرما کی گرفتاری کا مطالبہ۔
مظفر نگر: (سمیر چودھری)
جمعیة علماءہند شاخ بڈھانہ کی مجلس عاملہ کے خصوصی اجلاس میں عیدالاضحی (بقرعید) کے موقع پر قربانی کی افواہوں پر دھیان نہ دینے اور کھلے میں قربانی نہ کرنے اور قربانی کی تصویریں سوشل میڈیا پر وائرل نہ کرنے کی اپیل کی گئی اس کے ساتھ ساتھ ملک میں نفرت پھیلانے والوں کی مخالفت کی گئی۔ مجلس عاملہ کے اجلاس میں ادے پور کے واقعہ کی بھی مذمت کی گئی اور نوپور شرما کی گرفتاری کا مطالبہ بھی کیا گیا۔ ہفتہ کو کربلا روڑ پر واقع مسجد حمزہ میں منعقدہ مجلس عاملہ کے اجلاس کی صدارت جمعیة علماءبڈھانہ شہر صدر حافظ شیردین نے کی اور نظامت حافظ تحسین اور محمد آصف قریشی بڈھانوی نے مشترکہ طور پر کی۔ اجلاس میں مجلس عاملہ کے اراکین کے علاوہ عہدیداران نے بھی شرکت کی۔ اجلاس میں مختلف قراردادیں متفقہ طور پر منظور کی گئیں جس میں تعلیمی بیداری مہم جاری رکھنے اور مساجد و مدارس کے سروے اور بارش کے موسم میں درخت لگانے اور جمعیة علماءہند کے دونوں گروپوں کے انضمام پر خوشی کا اظہار کیا گیا۔ اپنے صدارتی خطاب میں جمعیة علماءبڈھانہ کے شہر صدر حافظ شیردین نے کہا کہ جمعیة علماءہند کی ایک روشن تاریخ ہے، جمعیة کے بزرگوں نے ملک کی آزادی میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا تھا اور بڑی خدمات انجام دی ہیں، جنہیں فراموش نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے مدارس کے حوالے سے تفصیلی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مدارس اور مساجد سے پڑھنے والا ہمارا امام پیشوا بن کر ہماری رہنمائی کرتا ہے۔حافظ شیردین نے عیدالاضحی کے حوالے سے کہا کہ مسلمان عید الاضحیٰ 10 جولائی 2022 کو منائیں گے جو کہ ایک انتہائی مقدس تہوار ہے، انہوں نے مسلمانوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ قربانی پردے میں کریں اور کسی بھی قسم کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل نہ ہو اور صفائی کا خاص خیال رکھتے ہوئے قربانی ادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ قربانی ہمیشہ کی طرح کی جائے گی، افواہوں پر توجہ نہ دیں۔ حافظ شیردین نے عیدالاضحی کی اہمیت اور فضیلت کے متعلق ۵ پروگرام کرنے کی تجویز بھی دی جسے قبول کرلیا گیا۔ ضلع سکریٹری و میڈیا انچارج محمد آصف قریشی نے رپورٹ پیش کرتے ہوئے گزشتہ دنوں جمعیة علماءہند بڈھانہ کی طرف سے کئے گئے کاموں پر تفصیل سے روشنی ڈالی اور کہا کہ برسات شروع ہو چکی ہے، اس میں جمعیة کے تمام کارکنان پہلے کی طرح درخت لگائیں۔ مجمع میں موجود تمام مقررین نے نوپور شرما کی گرفتاری کا مطالبہ کیا اور کہا کہ سپریم کورٹ نے بھی نوپور کے بیان کو انتہائی خطرناک قرار دیا ہے۔ مقررین نے کہا کہ بھارتی حکومت نوپور کو گرفتار کرے۔ مولانا عاقل قاسمی نے کہا کہ ادے پور میں جو واقعہ ہوا، ہم اس کی شدید مذمت کرتے ہیں، یہ واقعہ انتہائی غلط ہے۔مفتی آزاد قاسمی قاری عبدالقادر فلاحی نے تعلیمی بیداری پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ آج ہمارے بچوں کو دونوں علوم حاصل کرنے کی ضرورت ۔ مولانا صنور قاسمی اور مفتی زاہد حسین قاسمی نے تنظیم کی مضبوطی پرزور دیا۔علاوہ ازیں کوثر علی رانا ، حافظ اللہ مہر نے ،حاجی شرافت علی اور مولانا عبدالجلیل نے عید الاضحی کے حوالے سے اپنے خیالات رکھتے ہوئے کہا کہ ہمیں تہوار کو امن کے ساتھ منانا ہے۔ تقریب سے مولانا شہزاد حافظ عبدالغفار حاجی شرافت قاری ندیم راشد منصوری اسلام سیفی نے بھی خطاب کیا۔ اس دوران مفتی یامین قاسمی، اسلام سیفی، اقبال رانا، حاجی حسین، روض الدین انصاری، قاری تجمل حسن، قاری عثمان، قاری فرمان، نذر محمد، حافظ نعیم، حافظ عبدالجبار، ندیم علی، محمد نوید فریدی، حافظ کامل، حاجی علی جان آڑتی، شاہد قریشی، حافظ خالد وغیرہ موجود تھے۔