گستاخ رسول ؐ بی جے پی رکن اسمبلی راجہ سنگھ کو حیدرآباد پولیس نے کیا گرفتار۔
حیدرآباد: محسن انسانیت حضور اکرم ؐ کی شان اقدس میں گستاخی کرنے والے تلنگانہ بی جے پی کے رکن اسمبلی راجہ سنگھ کو حیدرآباد پولیس نے گرفتار کرلیا۔ راجہ سنگھ کے گستاخانہ ریمارکس کے ویڈیو کے وائرل ہونے کے بعد شہرحیدرآباد میں کمشنر پولیس حیدرآباد کے دفتر کے ساتھ ساتھ شہر کے کئی حصوں میں بڑے پیمانہ پراحتجاج کیا گیا۔اس ویڈیو کے بعد دبیرپورہ پولیس نے زعفرانی جماعت کے رکن اسمبلی کے خلاف معاملہ درج کرلیا۔اس احتجاج پر پولیس نے کئی مظاہرین کو منگل کو گرفتار کرلیا۔
دفتر کمشنر پولیس حیدرآباد، ڈی جی پی دفتر،پراناشہر حیدرآباد میں قدیم کمشنرپولیس دفتر کے ساتھ ساتھ شہر کے کئی اہم مقامات پر پولیس کی بھاری تعداد کو تعینات کردیاگیا کیونکہ کئی مقامات پر راجہ سنگھ کے خلاف مظاہرے شروع ہوگئے ہیں۔ اسی اثناء میں شاہ عنایت گنج پولیس نے راجہ سنگھ کو گرفتارکرکے بلارم پولیس اسٹیشن منتقل کردیا۔
واضح رہے کہ بی جے پی کے حلقہ اسمبلی گوشہ محل کے رکن اسمبلی ٹی راجہ سنگھ کی جانب سے حضوراکرم صلعم کی شان میں گستاخی کی گئی جس پربرہم مسلمان کل رات دیرگئے سے حیدرآباد کے پرانے شہرکے مختلف مقامات پر برہم ہوکرسڑکوں پرنکل آئے اوراحتجاج کیا۔ دبیر پورہ پولیس اسٹیشن میں راجہ سنگھ کے خلاف آئی پی سی کی دفعہ 153 کے تحت مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔ 
راجہ سنگھ کو گرفتارکرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے حیدرآباد کمشنرپولیس کے دفترکے سامنے زبردست احتجاج کیا گیا پولیس نے احتجاجیوں کو حراست میں لے کرمختلف پولیس اسٹیشنوں کو منتقل کردیا۔ ساتھ ہی کئی پولیس اسٹیشنوں میں راجہ سنگھ کے خلاف تحریری طورپرشکایت درج کروائی جارہی ہے۔ رات دیرگئے راجہ سنگھ کا گستاخانہ ویڈیو وائرل ہونے کے بعد مسلمانوں میں شدید برہمی کی لہرپائی جاتی ہے۔ صورتحال کی سنگین نوعیت کو دیکھتے ہوئے پرانا شہرکے کئی حساس مقامات پرپولیس کے دستوں کو متعین کردیا گیا ہے۔

اُردو لیکس