پل کی مرمت ہوئی تھی تو پھریہ حادثہ کیسے پیش آیا؟ کانگریس صدر کا سوال۔
نئی دہلی: کانگریس صدر ملکارجن کھڑگے نے گجرات حادثہ کو سنگین واقعہ قرار دیتے ہوئے اس کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ کھڑگے نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس معاملے میں زبردست لاپرواہی ہوئی ہے اور سپریم کورٹ یا ہائی کورٹ کے ریٹائرڈ جج سے تحقیقات کرائی جانی چاہئے۔ انہوں نے سوال کیا کہ یہ بھی معلوم ہونا چاہیے کہ جب حال ہی میں اس پل کی مرمت ہوئی ہے تو پھر یہ حادثہ کیسے ہوا؟انہوں نے کہا کہ یہ بھی بڑا سوال ہے کہ جب یہ پل بہت پرانا تھا تو پھر بیک وقت اتنی بڑی تعداد میں لوگوں کو اس پر جانے کی اجازت کس نے دی، اس کی بھی تحقیقات ہونی چاہیے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس حادثے کے تمام قصورواروں کوسزا دینا بہت ضروری ہے۔ملکارجن کھڑگے نے متاثرین کے اہل خانہ کو راحت دینے کا بھی مطالبہ کیا۔ انہوں نے کانگریس کارکنوں سے بھی اپیل کی کہ وہ مصیبت زدہ لوگوں کی مدد کریں۔قابل ذکرہے کہ گجرات کے موربی میں اتوار کی رات مچھو ندی پر بنے پرانے کیبل پل کے اچانک گرنے سے حادثے میں۱۴۱سے زیادہ لوگوں کی موت ہو گئی ہے۔ جبکہ 180 کے قریب لوگوں کو بحفاظت نکال لیا گیا ہے۔ کچھ لوگ لاپتہ ہیں جنہیں تلاش کرنے کے لئے آپریشن چلایا جا رہا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ حادثے کے وقت پل پر 400 سے زیادہ لوگ موجود تھے۔