جے پور: راجستھان کے بھیلواڑہ کے بدھلہ چوراہے پر شرپسندوں کی جانب سے کی گئی فائرنگ میں ایک شخص کی موت ہوگئی، جب کہ دوسرا ہسپتال میں اپنی زندگی کی جنگ لڑ رہا ہے۔ پولیس کے مطابق دونوں مسلم نوجوان بھائی ہیں، جو موٹر سائیکل سے ہرنی مہادیو علاقہ کی طرف جارہے تھے۔ جہاں 4 شرپسندوں نے ابراہیم پٹھان اور قمرالدین ٹونی کو گھیر لیا اور ان پر فائرنگ کر دی جس میں ابراہیم کی موقع پر ہی موت ہوگئی جبکہ اس کا بھائی ٹونی شدید زخمی ہوا ہے۔ اطلاع ملتے ہی پولیس موقع پر پہنچی، زخمی ٹونی کو ہسپتال پہنچایا اور 48 گھنٹے کے لیے انٹرنیٹ خدمات معطل کرنے کا اعلان کیا۔ اس معاملے میں چاروں شرپسندوں کا تعلق ہندتوا تنظیموں سے بتایا جا رہا ہے۔ اس واقعہ کو بھیلواڑہ کے آدرش تاپاڈیا قتل کیس کا بدلہ قرار دیا جا رہا ہے۔ پولیس نے بھی اسے انتقامی قتل قرار دیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ پولیس انتہائی احتیاط برت رہی ہے تاکہ شہر میں سماجی ہم آہنگی خراب نہ ہو۔بھیلواڑہ شہر کا ماحول خراب نہ ہونے کے لیے محکمہ پولیس نے بھی سخت سکیورٹی تعینات کر دی ہے اور عام لوگوں سے امن کی اپیل کی جا رہی ہے۔ اس وقت 24 گھنٹے گزرنے کے باوجود قاتل پولیس کی گرفت سے باہر ہیں۔ تاہم پولیس نے کچھ مشکوک افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔ بھلواڑہ میں دو نوجوانوں پر فائرنگ کے سلسلے میں پولیس نے بڑا انکشاف کیا ہے۔ آئی جی روپیندر سنگھ نے اسے انتقامی قتل قرار دیا ہے۔ یہ تار آدرش تاپاڈیا قتل کیس سے جڑے ہوئے ہیں۔ تاپاڈیا پر چھ ماہ قبل 10 مئی کو چاقو سے حملہ کیا گیا جس کے بعد اس کی موت ہوگئی تھی۔آئی جی روپیندر سنگھ نے یہ بھی کہا کہ حملہ آوروں کی شناخت کر لی گئی ہے۔ ان کے گھروں پر بھی چھاپے مارے جا رہے ہیں، جلد ہی ملزمین کو گرفتار کر لیا جائے گا۔ وہیں مقتول ابراہیم کا پوسٹ مارٹم کر دیا گیا ہے۔ پولیس نے اس معاملے میں 2 نوجوانوں کو حراست میں لیا ہے۔ ضلع پولیس سپرنٹنڈنٹ آدرش سدھو نے بتایا کہ واقعہ میں ملوث دو نوجوانوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ واردات کے دوران استعمال ہونے والا اسلحہ اور اسکوٹی بھی برآمد کر لی گئی ہے اور دونوں سے پوچھ گچھ جاری ہے۔