نئی دہلی: سینئر کانگریس رہنما، دہلی اسٹیٹ حج کمیٹی کے سابق چیئرمین، کانگریس اقلیتی شعبے کے سابق سکریٹری اور معروف کالم نگار انیس درانی کا آج ہفتے کی صبح نوئڈا کے ایک اسپتال میں انتقال ہو گیا۔ وہ 75 سال کے تھے۔ پسماندگان میں ایک بیٹی اور دو بیٹیاں ہیں۔مرحوم کی تدفین بعد نماز مغرب دہلی گیٹ کے قبرستان میں ادا کی گئی۔ ان کا جسد خاکی اسپتال سے پٹودی ہاوس دریا گنج میں واقع م۔ افضل کے گھر لایا گیا۔وہاںسے میت مسجد دائی والی تراہا بہرام خان میں لے جائی گئی جہاں نماز مغرب کے فوراً بعد نماز جنازہ ادا کی گئی اور دوسری نماز جنازہ دہلی گیٹ قبرستان میں ہوئی۔ سابق رکن پارلیمنٹ، سابق سفیر ہند اور سینئر کانگریس رہنما جناب م۔ افضل نے اظہار رنج و غم کرتے ہوئے کہا کہ انیس درانی کا انتقال ان کا ایسا ذاتی خسارہ ہے جو کبھی پُر نہیں ہوگا۔ انھوں نے مزید بتایا کہ انیس درانی کو دل کا شدید دورہ پڑنے کے بعد جمعے کی شام کو نوئڈا کے جے پی اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ ان کی حالت نازک ہونے کی وجہ سے انھیں وینٹی لیٹر پر رکھا گیا تھا لیکن حالت میں کوئی سدھار نہیں آیا۔ بالآخر ہفتے کی صبح کو وہ اپنے مالک حقیقی سے جا ملے۔ انا للہ و انا الیہ راجعون۔ واضح رہے کہ انیس درانی جناب م۔ افضل کے برادر نسبتی تھے۔