مسجد نبوی ﷺ اور مقدس مقامات کی بے حرمتی کے الزام میں پانچ پاکستانی شہری گرفتار۔
مدینہ منورہ پولیس نے مسجد نبوی ﷺ کے احاطے میں نازیبا الفاظ اور مقدس مقام کی بے حرمتی کے الزام میں 5 پاکستانیوں کی گرفتار کیا ہے۔
ترجمان مدینہ منورہ پولیس کے مطابق مسجد نبوی ﷺ کے احاطےمیں نازیبا الفاظ کے الزام میں 5 پاکستانی شہری گرفتار کرلیے گئے ہیں۔
مدینہ منورہ پولیس کا کہنا ہےکہ زیرحراست افراد پر زائرین اور نمازیوں کی سلامتی اورعبادات میں خلل ڈالنے کا الزام ہے، ملزمان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے گی۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ زیرحراست افراد نے پاکستانی خاتون اور ان کے ساتھیوں کے خلاف نازیبا الفاظ استعمال کیے اور گرفتار افراد پر مقدس مقام کی بےحرمتی کا الزام ہے۔پولیس کے مطابق زیرحراست افراد پر زائرین اور نمازیوں کی سلامتی اورعبادات میں خلل ڈالنے کا الزام ہے اور ملزمان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے گی۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز مسجد نبوی ﷺ میں پاکستان کے نومنتخب وزیر اعظم اور وفاقی وزرا کی موجودگی کے موقع پر ناخوشگوار واقعہ پیش آیا جس میں کچھ افراد نے چور چور کےنعرے لگائے اور مریم اورنگزیب کو گالیاں دی گئیں۔
اس کے علاوہ وفاقی وزیر شاہ زین بگٹی کے بال بھی کھینچے گئے جبکہ اس نعرے بازی میں پی ٹی آئی کے رہنما اور عمران خان کے سابق مشیر صاحبزادہ جہانگیر بھی پیش پیش تھے تاہم صاحبزادہ جہانگیر نے تردید کی ہے۔
مسجد نبویﷺ کواقعے کے بعد پاکستانی عوام میں شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے اور سوشل میڈیا پر تحریک انصاف اور سابق وزرا کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔