والدین نے اولاد پیدا نہ کرنے پر بیٹے سے زندگی بھر کے چھ لاکھ 50 ہزار ڈالر ادا کرنے کا حکم۔
نئی دہلی:  والدین نے عدالت میں اپنے بیٹے کے خلاف انوکھا مقدمہ کردیا، جس میں مطالبہ کیا ہے کہ بیٹا اور اس کی بیوی ایک سال میں پوتا یا پوتی پیدا کریں بصورت دیگر انہیں چھ لاکھ 50 ہزار ڈالر ادا کریں۔
خبر ایجنسی کے مطابق سنجیو اور سادھنا پرساد نے کہا ہے کہ انہوں نے اپنی ساری زندگی کی جمع پونجی اپنے بیٹے کو پائلٹ بنانے اور اسے اعلیٰ تعلیم دلوانے اور پھر شاندار انداز میں اس کی شادی کرانے پر خرچ کردی، لیکن بیٹے اور بہو نے ان کی خواہش پر ان کے لیے اگلی پیڑھی پیدا کرنے کے بجائے اپنی زندگی میں مگن ہوگئے ہیں۔
والدین نے شہر ہریدوار کی عدالت میں گزشتہ ہفتے کیس فائل کرتے  کہا کہ ’ہمارے بیٹے کی شادی کو 6 سال ہو گئے ہیں، لیکن انہوں نے ابھی تک اولاد کی پیدائش کے حوالے سے کچھ نہیں سوچا۔  
میڈیا کے مطابق سنجیو اور سادھنا پرساد نے زرتلافی کی جس رقم کا مطالبہ کیا ہے اس میں فائیو اسٹار ہوٹل میں شادی، 80 ہزار ڈالر کی لگژری گاڑی، بیٹے اور بہو کے تھائی لینڈ میں ہنی مون اور بیٹے کے امریکا میں پائلٹ بننے پر آنے والے 65 ہزار ڈالر کے اخراجات شامل