داروغہ نے ہی کردی پولیس اہلکاروں ساتھ بدتمیزی اور ہاتھا پائی، داروغہ سمیت تین کو بھیجا جیل۔
دیوبند،8 مئی(سمیر چودھری)
اسٹیٹ ہائی وے پر واقع ہوٹل میں چیکنگ کے لیے گئی ٹیم کے ساتھ یوپی پولیس کانسٹیبل نے جم کر بدسلوکی کی، الزام ہے کہ چیکنگ کے لیے گئے ایس آئی کے ساتھ ہاتھا پائی بھی کئی گئی۔ بدتمیزی کرنے والا داروغہ بلند شہر میں تعینات ہے، جو اس وقت میڈیکل پر ہے۔ شک ظاہر کیاجارہاہے کہ ہوٹل میں غیر اخلاقی کام کئے جاتے ہیں،جس کی وجہ سے مذکورہ انسپکٹر نے پولیس کو غصہ دکھا کر ٹیم کو اندر جانے سے روک دیا۔ معاملے میں رپورٹ درج کرنے کے بعد انسپکٹر سمیت تین لوگوں کو گرفتار کر کے جیل بھیج دیا گیا ہے۔معاملہ سہارنپور مظفر نگر ہائی وے پر واقع جامعہ طبیہ میڈیکل کالج کے سامنے بنے ہوٹل کا ہے۔ یہاں دوپہر میں خانقاہ پولیس چوکی کے انچارج انوج کمار ٹیم کے ساتھ چیکنگ کے لیے گئے۔ جہاں ان کے ساتھ بدتمیزی کی گئی۔ انسپکٹر پربھاکر کینتورا کے مطابق جب پولس ٹیم چیکنگ کے لیے ہوٹل پہنچی تو وہاں موجود چند پور کائستھ کا باشندہ دنیش، جے کشن اور ساحل نے ٹیم کو اندر جانے سے روک دیا۔ دنیش یوپی پولیس میں داروغہ ہے، جو بلند شہر میں تعینات ہیں اور فی الحال میڈیکل لیو پر ہے۔ پولیس کو غصہ دکھاتے ہوئے اس نے چیکنگ پر پہنچنے والے ایس آئی کا گلا پکڑ لیااور سپاہیوں کے ساتھ بدسلوکی بھی کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ایس آئی انوج کمار کی شکایت پر انسپکٹر سمیت تین لوگوں کے خلاف سرکاری کام میں رکاوٹ ڈالنے سمیت دیگر دفعات کے تحت رپورٹ درج کی گئی اور انہیں گرفتار کرکے جیل بھیج دیا گیا۔انسپکٹر پربھاکر کینتورا نے بتایا کہ پولیس ٹیم بنگلہ دیشیوں کی تلاش میں ہوٹل گئی تھی۔ لیکن داروغہ دنیش نے ٹیم کو اندر جانے سے روک دیا۔ شبہ ہے کہ ہوٹل میں کوئی غیر اخلاقی حرکت ہو رہی تھی۔ اندر بہت سے کمرے بنائے گئے ہیں۔ ماضی میں بھی ایسی اطلاعات موصول ہوتی رہی ہیں،جانچ کے مزید کارروائی کی جائیگی۔