آتشزدگی سانحہ سے متاثرین سے ملا آل انڈیا ملی کونسل کا وفد، متاثرین سے اظہار ہمدری کے ساتھ کیا مالی تعاون، حکومت سے فائر اسٹیشن قائم کرنے مانگ۔
دیوبند: (سمیر چودھری)
تحصیل بہٹ علاقہ کے گاوں نانولی میں گزشتہ دنوں آتشزدگی کا ایک خوفناک سانحہ پیش آیا جس کی وجہ سے گاوں کے تقریباً 7 کمزور لوگوں کے آشیانوں کو چند لمحات میں خاکستر کرتی چلی گئی اور گھروں میں رکھا سامان و جمع پونجی سب جل کر راکھ ہوگئی۔
اس سانحہ کے متاثرین سے اظہار ہمدری اور ان کی مدد کو اپنا دینی،ملی، انسانی اور علاقائی، فریضہ سمجھتے ہوئے آل انڈیا ملی کونسل سہارنپور یونٹ کے ایک وفد نے متاثرہ علاقہ کا دورہ کیا اورمتاثرین سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے صبر و تحمل کی تلقین کی۔اس دوران وفد نے متا ¿ثرہ گھروں کا جائزہ لیااور کونسل کے ضلع صدر مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی متا ¿ثرین کے نقصان کی تلافی و مدد کے لئے گاوں کے کچھ ذمہ داران حضرات پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دی، جن میں موجودہ پردھان فرقان، مولانا راشد مظاہری، سابق پردھان عبدالجبار، اشفاق عنبر، حاجی یامین وغیرہ نے پہل کرتے ہوئے اپنی جانب سے ایک مالی رقم اس کمیٹی کے حوالے کی۔
ضلع صدر ملی کونسل و مہتمم جامعہ رحمت گھگھرولی مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی نے متا ¿ثرین سے صبر کی تلقین کی اور تمام حاضرین کو یہی بات سمجھائی کہ سب کچھ اللہ ہی کی امانت ہے وہی دے کر بندہ کو آزماتا ہے، لہٰذا ہمیں صبر و عزم کے ساتھ زندگی بسر کرنی چاہیے۔مولانا نے مزید کہا کہ ملی کونسل سہارنپور حالات کے ہرنازک موڑ پر ہمیشہ ملت کے ساتھ قدم سے قدم ملاکر کھڑی رہی ہے اور آئندہ بھی یہ سلسلہ جاری رہے گا۔
آل انڈیا ملی کونسل نے حکومت سے متاثرین کی مدد کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ بہٹ علاقہ آگ سے کافی متاثررہتاہے اسلئے کونسل کا یہ دیرینہ مطالبہ ہے کہ اس علاقہ میں فائر اسٹیشن قائم کیا جائے۔وفد میں شامل رہے مولانا دلشاد مظاہری مہتمم مدرسہ اسلامیہ حیات العلوم گندیوڑہ نے بھی ایک مالی رقم جمع کرکے کمیٹی کے حوالے کی، اسی طرح عبدالقیوم پردھان گھگھرولی نے بھی اپنی جانب سے نقدی تعاون پیش کیا۔
وفد میں مولانا راشد مہتمم مدرسہ شیخ پورہ، قاری حامد، قاری ندیم، مولانا سلمان مغیثی، قاری ایوب، قاری عبدالقادر ٹوڈرپور، مولانا عبدالقادر، قاری مرسلین، فرقان پردھان، چودھری ہاشم جنرل سیکرٹری بلاک سڈھولی قدیم، قاری ثاقب جامعی، قاری ریاست کریمی، طالب چودھری، ماسٹر ارشاد، قاری طارق، حاجی یامین، قاری ثوبان، قاری وسیم، حافظ احکام وغیرہ سمیت بستی کے کافی ذمہ دار حضرات موجود رہے۔