دیوبند پولیس نے کیاغیر قانونی پٹاخہ فیکٹری کا پردہ فاش، بڑی مقدار میں دھماکہ خیز مواد کے ساتھ تین گرفتار، چار فرار۔
دیوبند: سمیر چودھری۔
تحصیل دیوبند کے گاوں مانکی میں پولیس نے چھاپہ ماری کے دوران ناجائز طریقہ سے چلائی جانے والی پٹاخہ فیکٹری پکڑی ہے ۔پولیس نے چھاپہ مار کارروائی کے دوران موقع سے تین لوگوں کو گرفتار کیا ہے جبکہ فیکٹری میں پٹاخہ بنانے والے چار افراد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔پولیس کا کہنا ہے کہ اس نے غیر قانونی طریقہ سے چلائی جانے والی پٹاخہ فیکٹری سے بڑی مقدار میں پٹاخے بنانے میں کام آنے والا بارود اور دیگر سامان کے علاوہ پٹاخے تیار کرنے میں کام آنے والی مشینیں وغیرہ بھی بر آمد کی ہیں۔ایس پی دیہات نے دیوبند پہنچ کر اس پورے واقعہ کا راز فاش کیا۔
گذشتہ رات پولیس کو دیوبند کے قریبی گاو ¿ں مانکی میں غیر قانونی طریقہ سے پٹاخہ فیکٹری چلائے جانے کی اطلاع ملی تھی ۔اطلاع ملتے ہی دیوبند کے کوتوالی انچارج پربھاکر کینتورا کی قیادت میں پولیس ٹیم نے مانکی پہنچ کر چھاپہ مار کارراوئی کرتے ہوئے موقع سے تین لوگوں کو گرفتار کیا جبکہ چار لوگ پولیس دیکھ کر موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ۔سنیچر کے روز ایس پی دیہات نے دیوبند کوتوالی میں غیر قانونی طریقہ سے چلائی جانے والی پٹاخہ فیکٹری کے پکڑے جانے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ موقع سے گرفتار کئے جانے والے ملزمان محلہ تیر گران دیوبند کے باشندہ ناصر،جاوید اور صادق ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ چھاپہ مار کارروائی کے دوران ساجد ،نوید اور اعظم اور ان کاساتھی معصوم فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ۔ایس پی دیہات نے بتایا کہ مذکورہ فیکٹری سے 1لاکھ 72ہزار 800روپے کے تلی بم ،غیر تیار شدہ تلی بم اور 3لاکھ 35ہزار 600روپے کے دیگر پٹاخے بر آمد کئے ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ یہ تمام سامان گتے کے ڈبوں میں بھرے ہوئے پائے گئے ۔اس کے علاوہ پٹاخے بنانے کے آلات بھی بر آمد کئے گئے ہیں۔پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار ملزمان کے خلاف اسلحہ ایکٹ کے تحت معاملہ درج کرکے جیل بھیجا گیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ فرار ملزمان کی گرفتاری کے لئے دبش دی جارہی ہے ۔اس موقع پر سی او رام کرن سنگھ ،کوتوالی انچارج پربھاکر کینتورا کے علاوہ چھاپہ مار ٹیم میں شامل پولیس اہلکار موجود رہے۔