دارالعلوم دیوبند کے نائب مہتمم مولانا عبدالخالق مدراسی کو صدمہ، بنگلور میں برادراصغر کا انتقال، مولانا دیوبند سے بنگلور کے لئے روانہ، تدفین صبح۔
دیوبند: دارالعلوم دیوبند کے نائب مہتمم مولانا عبدالخالق مدراسی کے چھوٹے بھائی حاجی عبدالہادی کا علالت کے باعث اتوار کو بنگلور میں انتقال ہوگیا ہے۔ وه ۷۲ سال کے تھے۔ مرحوم نہایت نیک طبیعت کے مالک دیندار شخص تھے، تبلیغ جماعت کے سر گرم رکن نہایت متدین شخصیت کے مالک اور ایک کامیاب تاجر تھے۔ نماز جنازہ پیر کی صبح بنگلور میں ادا کی جائے گی اور وہیں تدفین عمل میں آئے گی۔ مولانا عبدالخالق مدراسی دیر شام دیوبند سے بنگلور کے لیے روانہ ہوگئے ہیں اور وہ نماز جنازہ میں شرکت کریں گے۔
حاجی عبد الہادی کے انتقال کی خبر سے دیوبند میں غم کی لہر دوڑ گئی۔ نامور علمائے کرام نے مولانا عبدالخالق مدراسی کے برادر اصغر کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے تعزیت پیش کی۔
حاجی عبدالہادی کے انتقال پر دارالعلوم دیوبند کے مہتمم مولانا مفتی ابوالقاسم نعمانی، صدر المدرسین و جمعیت علمائے ہند کے قومی صدر مولانا سید ارشد مدنی، جمعیت علماء ہند کے صدر مولانا سید محمود مدنی، نائب مہتمم مفتی راشد اعظمی، مولانا سلمان بجنوری، دارالعلوم وقف دیوبند کے مہتمم مولانا محمد سفیان قاسمی، رکن پارلیمنٹ مولانا بدرالدین اجمل، رکن شوریٰ مولانا انوار الرحمن بجنوری، جامعہ مظاہرعلوم سہارنپور کے امین عام مولانا سید شاہد الحسینی، مدرسہ مظاہر علوم وقف سہارنپور کے متولی مولانا محمد سعیدی، نامور عالم دین مولانا ندیم الواجدی، آل انڈیا ملی کونسل کے قومی صدر مولانا حکیم عبداللہ مغیثی، آل انڈیا ملی کونسل کے ضلع صدر مولانا ڈاکٹر عبد المالک مغیثی، دارالعلوم زکریا دیوبند کے مہتمم مولانا مفتی شریف خان قاسمی، جامعۃ الشیخ حسین احمد مدنی دیوبند کے مہتمم مولانا مزمل علی قاسمی، کُل ہند رابطہ مساجد کے جنرل سیکریٹری مولانا عبداللہ ابن القمر الحسینی، مولانا عبدالعلیم جنید قاسمی بنگلوری، مولانا مفتی عبدالخالق قاسمی الماجروي اور جامع مسجد سہارنپور کے منیجر مولانا فرید مظاہری سمیت نامور علماء کرام اور سماجی و سیاسی شخصیات نے مولانا عبدالخالق مدراسی سے تعزیت مسنونہ کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے انتقال پر افسوس ظاہر کیا اور ان کے لئے دعائے مغفرت اور ایصال ثواب کا اہتمام کیا۔

سمیر چودھری۔