سماجوادی پارٹی کو جھٹکا: سہارنپور کے قد آور لیڈر عمران مسعود مایاوتی کی بی ایس پی میں شامل، مایاوتی نے دیا "آشیرواد"۔
لکھنؤ/ سہارنپور: سہارنپور کے بڑے لیڈر اور سابق ایم ایل اے عمران مسعود اکھلیش یادو کو بڑا جھٹکا دیتے ہوئے سماج وادی پارٹی کی سائیکل کی سواری چھوڑ کر مایاوتی کے ہاتھی پر سوار ہو گئے۔
اسمبلی انتخابات 2022 میں عمران مسعود کانگریس چھوڑ کر ایس پی کی سائیکل پر سوار ہوئے تھے، لیکن ایس پی سربراہ کی جانب سے نظر انداز کیے جانے کی وجہ سے عمران مسعود اب آنے والے بلدیاتی انتخابات اور لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر بی ایس پی کے ہاتھی پر سوار ہوگئے۔ بدھ کو لکھنؤ میں پارٹی سربراہ مایاوتی کی رہائش گاہ پر انہوں نے بی ایس پی کی رکنیت لی، مایاوتی نے انہیں آشیرواد دیتے ہوئے کہا کہ بی ایس پی کے سروجن ہتائے، سروجن سکھائے کے نعرے کو لوگوں تک پہنچا ئیں۔ 

بی ایس پی کی رکنیت لینے کرنے کے بعد عمران مسعود نے آج کے دن کو تاریخی قرار دیتے ہوئے کہا کہ آنے والا وقت بی ایس پی کا ہے کیونکہ ہمارے سماج نے اسمبلی الیکشن میں یکطرفہ طور پر سماج وادی پارٹی کو ووٹ دیا تھا لیکن وہ تجربہ کامیاب نہیں ہوا۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے سماج کے ساتھ ایک بڑی طاقت کی ضرورت تھی جو ہمیں بی ایس پی سے ملی ہے، اب ہم بہن جی کے سروجن ہتائے اور سروجن سکھائے کے نعرے کو آگے بڑھانے کے لیے کام کریں گے۔ انہوں نے مایاوتی کو پارٹی کی رکنیت دینے پر شکریہ ادا کیا۔
بتا دیں کہ عمران مسعود 2022 کے اتر پردیش اسمبلی انتخابات سے پہلے ہی سماج وادی پارٹی میں شامل ہو گئے تھے، اب انہوں نے اچانک پارٹی چھوڑنے کا فیصلہ کیوں کیا، یہ تو معلوم نہیں ہو سکا، لیکن ذرائع کا کہنا ہے کہ ایس پی سربراہ کی جانب سے انہیں نظر انداز کرنے کی وجہ سے عمران مسعود نے یہ فیصلہ لیا ہے. ان کے بھائی نعمان مسعود پہلے ہی بی ایس پی میں ہیں اور بی ایس پی کے ٹکٹ پر 2022 کا اسمبلی الیکشن بھی لڑ چکے ہیں۔ آج وہ اپنے اہل خانہ اور حامیوں کے ساتھ بی ایس پی میں شامل ہو گئے۔ بتایا جا رہا ہے کہ عمران مسعود خاندان کے کسی فرد کو بی ایس پی کے ٹکٹ پر سہارنپور میئر کا انتخاب لڑا سکتے ہیں۔
مانا جا رہا ہے کہ مایاوتی کو مغربی یوپی میں ایک بڑے مسلم چہرے کی تلاش تھی، جو شاید اب پوری ہو گئی ہے۔ عمران مسعود زمینی سطح پر کافی مضبوط لیڈر سمجھے جاتے ہیں۔ سیاسی ماہرین کا خیال ہے کہ یہ معاہدہ عمران مسعود اور بی ایس پی دونوں کے لیے فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔

سمیر چودھری۔