سہارنپور: مبینہ طور پر دُوسرے فرقہ کی معشوقہ سے ملنے گئے عاشق کا لڑکی کے گھر والوں نے پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا، وہیں لڑکی نے بھی پھا نسی پر لٹک کر خود کشی کر اپنی زندگی ختم کر لی۔
واقعہ تھانہ رام پور منیہاران علاقہ کے گاؤں اسلام نگر کا ہے۔ گُزشتہ رات ضیاء الرحمان (20) ولد ایوب احمد گاؤں میں ہی ایک لڑکی کے گھر میں گھس گیا تھا۔ جہاں گھر کے کئی نوجوانوں نے اس کی زبردست پٹائی کی۔ اس کے ساتھ ہی پولیس کو بھی اس کی اطلاع دی گئی۔ اطلاع ملتے ہی پولیس موقع پر پہنچ گئی اور زخمی نوجوان کو اسپتال میں داخل کرایا۔ جہاں سے اُسے ہائر سینٹر ریفر کیا گیا۔ تاہم ضیاء الرحمن نے راستے میں ہی دم توڑ دیا۔ متوفی نوجوان کے لواحقین نے نوجوان کے رشتہ داروں پر مار پیٹ کرنے اور قتل کرنے کا الزام لگا ہے۔
جب پولیس اس معاملے کی تحقیقات کرنے گاؤں پہنچی تو لڑکی بھی اپنے کمرے میں پھندے سے لٹکی ہوئی ملی، پولیس کے مطابق لڑکی نے خودکش کی ہے، جبکہ کچھ لوگوں کا دبی زبان کہنا ہے کہ لڑکی کا بھی قتل کیا گیا ہے۔
ایس ایس پی سمیت تمام پولیس افسران گاؤں پہنچ گئے۔ گاؤں میں کشیدہ صورتحال کے پیش نظر بڑی تعداد میں فورسز کو تعینات کیا گیا۔
متوفی لڑکا اور لڑکی دونوں الگ الگ فرقہ سے ہونے کی وجہ سے گاؤں میں کشیدگی کی صورتحال پیدا ہوگئی۔ ایس ایس پی ڈاکٹر وپن ٹاڈا بھی پولیس کی بھاری نفری کے ساتھ گاؤں پہنچے۔ کشیدہ صورتحال کے پیش نظر گاؤں میں پولیس فورس تعینات کردی گئی۔ اس کے ساتھ ہی متوفی کی لاش کو تحویل میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے بھیج دیا گیا۔ ایس ایس پی نے پورے معاملے کی مکمل تفتیش شروع کر دی ہے۔ تاہم ابھی تک کسی بھی فریق نے کوئی شکایت نہیں آئی ہے۔
ڈاکٹر۔وپن ٹاڈا ایس ایس پی سہارنپور نے کہا کہ گاؤں کی ایک لڑکی کے گھر ایک نوجوان گھس آیا تھا۔ جہاں اسے کچھ لوگوں نے مارا پیٹا اور وہ زخمی ہو گیا۔ نوجوان علاج کے دوران دم توڑ گیا۔ معاملے کی تحقیقات کے لیے جب ٹیم گاؤں پہنچی تو لڑکی نے بھی پھانسی لگا کر خودکشی کرلی۔ پورے معاملے کی گہرائی سے جانچ کی جا رہی ہے۔ ابھی تک کسی بھی فریق نے شکایت درج نہیں کرائی ہے۔ تحقیقات میں سامنے آنے والے حقائق کی بنیاد پر مزید مناسب قانونی کارروائی کی جائے گی۔

سمیر چودھری۔