دیوبند: سمیر چودھری۔
 قتل کے بعد خاتون کے لاش کے دو ٹکڑے کرکے بٹوڑوں میں رکھ کر جلادیا گیا ۔ اس واقعہ سے علاقہ میں سنسنی پھیل گئی، فورنسنک ٹیم نے بھی موقع پر پہنچ کر جانچ کی اور لاش کے بچے ہوئے اعضا کے نمونہ لئے ، اطلاع ملنے پر اعلیٰ افسران بھی موقع پر پہنچے اور تفصیلی معلومات حاصل کی۔ پولیس نے بچے ہوئے اعضاء کو قبضہ میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا اور واقعہ کے انکشاف کے لئے تین ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔ 
موصولہ اطلاع کے مطابق سہارنپور کے تیترو قصبہ میں قتل کے بعد خاتون کی لاش کے دو ٹکڑے کرکے گائوں کھنڈلانہ میں شمشان گھاٹ کے پاس بٹوڑوں میں رکھ کر جلادیا گیا۔ تیترو تھانہ علاقہ کے کھنڈلانہ میں صبح گائوں کے باشندے شمشان گھاٹ کی طرف سے گزرے تو انہیں نظر آیا کہ جگبیرا سینی اور روہتاش کے اپلوں کے بٹوڑوں میں آگ لگی ہے ، کچھ گائوں کے باشندوں نے آگ بجھانے کی کوشش کی تو وہاں پر لاش جلتی ہوئی نظر آئی، جس سے گائوں میں سنسنی پھیل گئی۔ جس کے بعد گائوں پردھان چندر پال شرما اور سابق پردھان ستیش شرما نے پولیس کو اطلاع دی ، اطلاع ملتے ہی تھانہ انچارج منوج کمار اپنی ٹیم کے ساتھ موقع پر پہنچے ، جانچ میں سامنے آیا کہ قتل کے بعد لاش کے دو ٹکڑے کئے اور انہیں دو بوروں میں لاکر الگ الگ بٹوڑوں میں رکھ کر جلادیا گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ لاش کے ٹکڑے تقریباً 90فیصد تک جل چکے ہیں ، ایس پی دیہات سورج رائے بھی موقع پر پہنچے ۔ انہو ںنے بتایا کہ ابھی تک کی جانچ میں لاش خاتون کی نظر آرہی ہے ، انہو ںنے بتایا کہ قتل کے بعد لاش کو بٹوڑوں میں رکھ کر جلایا گیا ہے، نامعلوم کے خلاف مقدمہ قائم کرلیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گائوں میں کسی کے لاپتہ ہونے کی اطلاع نہیں ہے ، پولیس نے آس پاس کے گائوں کے لوگوں کو بلاکر بھی شناخت کرانے کی کوشش کی ، پولیس تھانوں میں درج گمشدگی کی بنیاد پر ہی شناخت کرانے کی کوشش کررہی ہے۔
 اُدھر ایس ایس پی سہارنپور نے اس واردات کے انکشاف کے لئے پولیس کی تین ٹیمیں تشکیل دی ہیں، وہیں فورنسنک ٹیم نے کئی نمونے لئے ہیں ۔ ڈی این اے سمیت دیگر نمونوں کو جانچ کے لئے بھیجا جائے گا۔ ایس ایس پی نے بتایا کہ ہر پہلو پر پولیس جانچ کررہی ہے اور اس کے لئے پولیس کی تین ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں اور پولیس جلد ہی اس واردات کا انکشاف کردے گی۔